Mujhy Ehsas-e-Ulfat Tum Enayat Kyun Nahi Kartay

Mujhy Ehsas-e-Ulfat Tum Enayat Kyun nahi Kartay,
Meri Izzat toh Kartay Ho Muhabbat Kyun Nahi Kartay,

Yeh Saray Log Kehtay Hain K Tum Chanchal Tabiyat Ho,
Magar Tum Samnay Mere Shararat Kyun Nahi Kartay,

Jo Apni Guftugu Mein Phool Tum Taqseem Kartay Ho,
Kabhi in Phoolon ko Mujhpar Nichwaar Kyun nahi Kartay

Advertisements
  1. ابھی تک کوئی تبصرہ نہیں ہے۔
  1. No trackbacks yet.

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: